Wed 28 Aug 2019

Scammers, Hackers and Fraudulent are sending emails and messages over social media like WhatsApp, twitter or Facebook to people saying that they are eligible for tax refunds or other similar lucrative. The email asks the user to click a link and get their sums.

Further to that they ask user to login to the system where naive user use their banks or email or social accounts or financials credentials which promptly give hackers and fraudulent access to their information and accounts.

Once the user clicks on the phishing link, it takes them to a website that has similar look and feel that looks like promising and authentic. However, if you look closely, the URL of the website gives it away as it says.

  • Do not click on such links and be vigilant and look for URL and SSL certificate (locked / green).
  • Do not install Mobile apps and games without looking into permissions what they asks as they would ultimately gets access to mobile and data.
  • Be vigilante in giving permission to Mobile apps.
  • Be aware of using proxy servers, free Wi-Fi and VPN servers.
  • Never share personal Information, PIN numbers, OTP, passwords or Credit or Debit cards number or CCV code, banks, other financial accounts numbers, NTN etc.
See below one sample and informative video

گھوٹالے کرنے والے ، ہیکر اور دھوکہ دہی کرنے والے عام  لوگوں کو ای میل یا سوشل میڈیا واٹس ایپ ، ٹویٹر یا فیس بک پر پیغامات بھیج رہے ہیں کہ وہ ٹیکس کی واپسی یا اسی طرح کے دوسرے منافع یا رقم کی وصولی کے اہل ہیں۔ ای میل میں صارف سے کہا جاتا ہے کہ وہ کسی لنک پر کلک کریں اور ان کی رقم وصول کریں۔

اس کے علاوہ وہ صارف سے اس ویب سائٹ یا موبائل ایپلیکیشن میں لاگ ان ہونے کو کہتے ہیں جہاں صارف اپنے بینکوں یا ای میل یا معاشی اکاؤنٹس یا پاس ورڈ کا استعمال کرتے ہیں جو ہیکرز کو ان کی معلومات اور اکاؤنٹس میں فورا رسائی فراہم کر دیتا ہے ۔

ایک بار جب صارف فشینگ لنک پر کلیک کرتا ہے تو ، وہ لنک انہیں ایک ایسی ویب سائٹ پر لے جاتا ہے جو بلکل اصل ویب سائٹ  کی طرح نظر آتی ہے تاہم ، اگر آپ قریب سے دیکھیں تو ، ویب سائٹ کا یو آر ایل دوسرا ہوتا ہے اصل نہیں ۔

  • ایسے لنکس پر کلک نہ کریں اور چوکس رہیں اور یو آر ایل اور ایس ایس ایل سرٹیفکیٹ (لاک سائن / سبز رنگ) دیکھ لیں۔
  • موبائل ایپلیکیشن اور گیمس انسٹال نہ کریں ان کی permissions پر غور کیے بغیر کیوں کہ ایسا کرنے سے آخر کار انہیں آپ کے موبائل اور ڈیٹا تک رسائی حاصل ہوجاتی ہے۔
  • موبائل ایپس کو اجازت دینے میں چوکس رہیں۔
  • پراکسی سرورز ، مفت وائی فائی اور وی پی این سرورز کے استعمال سے محتاط رہیں۔
  • ذاتی معلومات ، پن نمبر ، او ٹی پی ، پاس ورڈز یا کریڈٹ یا ڈیبٹ کارڈ نمبر یا سی سی وی کوڈ ، بینک ، دوسرے مالی اکاؤنٹس نمبر ، این ٹی این وغیرہ کبھی بھی شیئر نہ کریں۔

ایک نمونہ اور معلوماتی ویڈیو نیچے دیکھیں۔

 

Beaware+-+physhing+email+link+example+1.jpg


Beaware+-+physhing+email+link+example+2.jpg

Comments here
Tue 17 Jul 2018

ایک ڈھائی سال کا بچہ ایمرجنسی میں لایا گیا.

چابی سے کھیلتے ہوئے اس نے وہی چابی بجلی کی ایکسٹینشن میں دے دی. شدید جھٹکا لگا اور جب تک ہمارے پاس پہنچا حرکت قلب بند ہو چکی تھی.

خدارا بچوں کے معاملے میں بہت احتیاط کریں. بالخصوص یہ 1 سے 3 سال کی عمر نہایت خطرناک ہے.

اس عمر کے بچے کو:

- کسی صورت میں بھی سکہ یا کوئی بھی ایسی چھوٹے سائز کی کھیلنے والی چیز نہ دیں جو گلے میں پھنس سکتی ہو.

- گولیاں ٹافیاں بالکل نہ دیں اور ڈرائی فروٹ بھی اپنی نگرانی میں دیں.

- بچے کا فیڈر کبھی بھی مائکرو ویو میں گرم نہ کریں. اس سے دودھ ہر طرف سے ایک جیسا گرم نہیں ہوتا اور کوئی "ہاٹ سپاٹ" بچے کا منہ جلا سکتا ہے.

- پنسل، تیلا، چابی یا کوئی بھی نوکیلی چیز مت پکڑنے دیں.

- بجلی کے ساکٹس پر ٹیپ لگا کر رکھیں اور کوئی بھی تار ننگی یا بغیر پلگ کے نہ چھوڑیں.

- ٹیبل پر ایسا کپڑا نہ ہو جسے بچہ کھینچ لے اور اوپر پڑا کوئی ڈیکوریشن پیس اسے زخمی کر دے.

- دراز ایسے ہوں(سٹاپر والے) کے بچہ کھینچے تو پورے کے پورے باہر نکل کر اسکے اوپر نہ گر جائیں.

- بچے کو کبھی بھی پانی سے بھری بالٹی یا باتھ ٹب کے پاس اکیلا کھڑا نہ چھوڑیں-. ایک لمحے کیلئے بھی نہیں. بچے اوندھے منہ بالٹی میں گر کر فوراً ڈوب جاتے ہیں.

- بچے کے گلے میں تعویذ، لاکٹ وغیرہ نہ لٹکائیں اور نہ چوسنی کا ہار پہنائیں. یہ کسی بھی وقت پھندا بن سکتے ہیں.

- تمام ادویات اور خطرناک کیمیکلز (مٹی کا تیل، بلیچ، تیزاب وغیرہ) ہر صورت میں تالے میں رکھیں.

- سیڑھی اور چھت کی منڈیر کے معاملے میں خاص احتیاط کریں.

- موٹرسائیکل پر بغیر کسی تیسرے بڑے شخص کے اپنے ساتھ اکیلے مت بٹھائیں.

- گاڑی میں اگلی سیٹ پر ہرگز نہ بٹھائیں اور گود میں لے کر ڈرائیو کرنے والے احمقوں والی حرکت تو بالکل نہ کریں.

- بیرونی دروازے ہمیشہ بند رکھیں اور خیال رکھیں کہ بچے کا ہاتھ کنڈی یا لاک تک نہ پہنچتا ہو.

یہ چند احتیاطی تدابیر آپکے ہنستے بستے گھر کو آناً فاناً ماتم کدہ بننے سے بچا سکتی ہیں.

A two and half year-old child was brought to emergency.

While playing with the key, he gave the same key to the power of electricity. It was a severe shock, the heart was closed.

Please be very careful in the case of children. Especially this is the age of 1 to 3 years old.

To the child of this age:

- Do not give a coin in any form or any small size that can be stuck in the throat.

- Pills Candy don't give and dry fruit also keep in your monitor.

- Baby's feeder never hot in the microwave. The milk is not hot every inside as any "hot spot" can burn Child's mouth.

- Don't let them catch pencil, key or any pointed item.

- Keep tape or plastic adopter on the sockets of electricity and don't leave any wire naked or without plug.

- Don't keep such cloth on the table that the child can pull and on the top there is no decoration piece, glass or heavy item on it.

- Do not Let the child never stand alone in bath filled with water, not even for a moment. The children may fall down in the face and they are drowned.

- Do not wore your children any amulet, locket or necklace as they can take them in mouth and reached to their throat.

- All medicines and dangerous chemicals (Mud Oil, bleaching, acid etc) keep in the locks in every case.

- Take special care in the case of ladder and roof.

- Don't let them sit alone on motorcycle without third adult person.

- Do not set your children in front seat of the car, and the fools who drive in the lap, do not be able to do so.

- Keep the outer doors always keep off and take care that the child's hand does not reach the kandi or the lock.

This few security strategies can save the house from becoming the mourning temple.

Categories : Thoughts / Lessons
Comments here
Sun 2 Dec 2012

A Urdu TV program Sar-e-Aam goes live about Secret videos of Girlfriends and blackmailing of girls females whose personal photos or videos shared and spread on social media facebook or on internet youtube etc by her boyfriend or other people who get into these stuffs.

Think before you get into extra marital relation or love and having photos or videos.

 

Categories : Thoughts / Lessons
Comments (4)
Sun 17 May 2009

If you dont get service at restaurant, then here you go....

Categories : Pics / Images Shot
Comments here